پاکستان کے خلاف ایک اور سرجیکل سٹرائیک کی ضرورت ہے :بپن راوت

نئی دہلی : بھارتی آرمی چیف بپن راوت نے کہا ہے کہ پاکستان کے خلاف ایک اور سرجیکل سٹرائیک کی ضرورت ہے، اپنے ایک تازہ بیان میں بپن راوت کا کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت پڑوسی ملک ہیں۔

ہم خطے میں قیام امن چاہتے ہیں اور اگر پاکستان بھی خطے میں امن کا فروغ چاہتا ہے تو اسے بھی ہماری طرح اقدامات کرنا ہوں گے۔ جب تک پاکستان دہشتگردوں کے خلاف اقدامات نہیں کرتا اس وقت تک خطے میں امن نہیں ہوسکتا۔

بھارت کی جانب سے پاکستان کو دھمکیاں دینے کا سلسلہ نیا نہیں ہے، ماضی میں کئی بار بھارتی حکومت کی جانب سے پاکستان پر مختلف نوعیت کے الزامات عائد کئے جاتے رہے ہیں۔ بھارت کی سیاسی قیادت نے بھی کئی مرتبہ پاکستانی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا لیکن گزشتہ روز تو اس وقت حد ہوگئی جب بھارتی آرمی چیف بپن راوت کی جانب سے یہ بیان سامنے آیا کہ خطے میں اس وقت تک امن نہیں ہوسکتا جب تک پاکستان دہشتگردوں کی سرپرستی کا سلسلہ بند نہیں کردیتا ، اگر اس نے ایسا نہیں کیا تو مجبوراً ہمیں کچھ کرنا پڑے گا۔

آج ایک بار پھر اپنے تازہ بیان میں بپن راوت نے اس بیان کو دہرایا ہے اور کہا ہے کہ دہشتگردوں کی سرپرستی کرنے پر پاکستان کیخلاف سرجیکل سٹرائیک بہت ضروری ہوچکی ہے اور اس پر جلد عملدرآمد کیا جائے گا۔

بھارتی آرمی چیف کے بیان پر پاکستان اور دنیا بھر میں رہنے والے پاکستانیوں نے شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے اور اس عزم کا اعادہ کیا ہے ملکی دفاع کی خاطر آخری حد تک جانے سے بھی گریز نہیں کیا جائے گا۔