مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کی بربریت کے خلاف مکمل ہڑتال

سری نگر: مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ظلم و بربریت کے خلاف آج مکمل ہڑتال ہے جب کہ احتجاج کو روکنے کے لیے بھارتی فورسز کے اضافی دستے تعینات کر دیئے گئے ہیں۔

کشمیر میڈیا سیل کے مطابق گزشتہ دو روز کے دوران ایک یونیورسٹی پروفیسر سمیت 14 نوجوانوں کی قابض بھارتی فوج کے ہاتھوں شہادت پر آج پوری وادی میں مکمل ہڑتال ہے۔ تمام اضلاع کے تعلیمی ادارے، کاروباری مراکز اور آمد ورفت کے تمام ذرائع مکمل طور پر بند ہیں۔ مقبوضہ کشمیر کی بھارت نواز کٹھ پتلی انتظامیہ نے احتجاج کو روکنے کے لیے فوج کے مزید نفری طلب کرلی ہے۔

مقبوضہ وادی کے کئی اضلاع آج فوجی چھاونیوں کا منظر پیش کر رہے ہیں جہاں بھارتی فوج نے جگہ جگہ رکاوٹیں کھڑی کرکے راستوں کو مکمل طور پر بند کر دیا ہے جب کے لوگوں کو سخت چیکنگ کے بعد جانے کی اجازت دی جا رہی ہے۔ وادی کے شوپیاں سمیت کچھ اضلاع میں نیٹ سروس بھی بند کردی گئی ہے تاکہ احتجاجی مہم کو روکا جا سکے۔

واضح رہے کہ گزشتہ دو روز میں ضلع چٹہ بل اور شوپیاں میں قابض بھارتی فوج نے نام نہاد سرچ آپریشن کے نام بچوں اور خواتین کو تشدد کا نشانہ بنایا جب کے یونیورسٹی کے پروفیسر سمیت 14 کشمیری نوجوانوں کو فائرنگ کر کے شہید کردیا تھا۔