طاہرالقادری جو بھی کریں گے ہم ان کے ساتھ ہیں، عمران خان

جڑانوالا: تحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے حوالے سے طاہرالقادری جو بھی کریں گے ہم ان کا ساتھ دیں گے۔

جڑانوالا میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے چیرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا تھا کہ فلسطینیوں پر اسرائیل کے ظلم پر دنیا چپ ہے، ظلم کے باوجود عالمی طاقتوں کے چپ رہنے سے ثابت ہوگیا کہ اقوام متحدہ کمزور ملک کی مدد کرنے نہیں آتی، اگر خدانخواستہ پاکستان پر بھی کسی نے قبضہ کرنے کی کوشش کی تو اقوام متحدہ مدد کو نہیں آئے گی ہمیں اللہ کا شکر ادا کرنا چاہئے کہ ہمارے پاس طاقتور فوج ہے ہماری حفاظت ہماری فوج کررہی ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ اسرائیل کی کوشش تھی کہ فرقہ وارانہ اختلافات پیدا کرکے مسلم امہ کو آپس میں لڑایا جائے لیکن بیت المقدس کے حوالے سے امریکی صدر کے بیان اور بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت بنانے کے اقدام سے مسلمانوں کو یہ فائدہ ہوا کہ سب ایک مؤقف پر اکٹھے ہوگئے۔

چیرمین تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ طاہرالقادری کو پیغام دیتا ہوں کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے حوالے سے آپ جو بھی کریں گے ہم آپ کے ساتھ نکلیں گے اور آپ کا بھرپور ساتھ دیا جائے گا۔ پنجاب کے وزیرقانون رانا ثنا اللہ کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کپتان نے کہا کہ رانا ثنااللہ صرف قاتل نہیں ہے وہ شکل سے بھی قاتل لگتا ہے، وہ پنجابی فلموں میں ولن کا کردار ادا کرسکتا ہے۔ ماڈل ٹاؤن میں 14 افراد کا قاتل رانا ثنااللہ ہے جس نے پولیس کو عوام پر گولیاں چلانے کا حکم دیا، خود (ن) لیگ کے رہنما اور عابد شیر علی کے والد کا کہنا ہے کہ راناثنااللہ نے 18 افراد کو فیصل آباد میں قتل کیا، ہم سب سے پہلے صوبائی وزیرقانون اور اس کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب شہازشریف کو جیل تک پہنچائیں گے، جس طرح ہر فرعون کے بعد ایک موسیٰ آتا ہے اسی طرح اب پنجاب حکومت کا بھی وقت آگیا ہے ہم انہیں بے گناہوں کے قتل میں انجام تک پہنچائیں گے۔

عمران خان کہا کہ 50 سال قبل ہم برصغیر میں سب سے آگے تھے لیکن آج کرپشن کی وجہ سے بہت پیچھے چلے گئے ہیں، نوازشریف جیسے حکمران جو بچوں کو ارب پتی بنادیتےہیں اور خود کہتے ہیں میرے پاس کچھ بھی نہیں، اداروں میں اپنی پسند کے کرپٹ افراد کو بٹھادیا جاتا ہے تاکہ حکمرانوں کو کوئی پکڑ نہ سکے، لیکن اب قوم جاگ چکی ہے اور نوازشریف کا نظریہ کرپشن بھی سمجھ چکی ہے ہم یہ میچ پاکستان کو جیت کر دکھائیں گے نوازشریف اس حقیقت کو سمجھ جائیں کہ ان کے مقابلے میں اب وہ شخص کھڑا ہے جسے خریدا نہیں جاسکتا۔