سانحہ ماڈل ٹاؤن کی رپورٹ عام کرنے کا فیصلہ برقرار

لاہور: ہائی کورٹ کے فل بینچ نے سانحہ ماڈل ٹاون کی رپورٹ منظر عام پر نہ لانے کے لیے پنجاب حکومت کی اپیل مسترد کردی ۔

جسٹس یاور علی کی سربراہی میں تین رکنی فل بنچ نے سانحہ ماڈل ٹاون سے متعلق جسٹس باقرنجفی کی رپورٹ پبلک کرنے اور اپیل کی درخواستوں پر سماعت کا آغاز کیا تو عدالت نے کہا کہ ایک ہی معاملے پر مختلف نوعیت کی درخواست آچکی ہیں جن کی سماعت ایک ساتھ ممکن نہیں ۔ جسٹس یاور نے درخواستوں پر سماعت کرنے سے معذرت کردی جس سے کیس کی سماعت کے لیے قائم بنچ ٹوٹ گیا۔

بعد ازاں لاہور ہائی کورٹ کا نیا فل کورٹ بینچ تشکیل دیا گیا جس کے سربراہ جسٹس عابد عزیز شیخ تھے جب کہ دیگر فاضل جج صاحبان میں جسٹس امین الدین خان اور جسٹس شہباز رضوی شامل تھے۔ فاضل بینچ نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد رپورٹ پبلک نہ کرنے سے متعلق پنجاب حکومت کی اپیل مسترد کردی تاہم فیصلے کے خلاف انٹرا کورٹ اپیل کی سماعت 2 اکتوبر سے روزانہ کی بنیاد پر ہوگی۔