رائس ایکسپورٹرزکا روہنگیا کو پاکستان بسانے کا اعلان

کراچی: پاکستان کی تاجربرادی میانمارمیں ظلم کا شکار روہنگیا مسلمانوں کی مدد کے لیے میدان میں نکل آئی ہے۔

پاکستان کے چاول کے ایکسپورٹرز کی نمائندہ انجمن رائس ایکسپورٹر ایسوسی ایشن نے ایک ہزار مسلمان روہنگیا خاندانوں کو پاکستان لانے، ان کو جگہ فراہم کرنے کے ساتھ باعزت نوکری دینے اور ان کے بچوں کو تعلیم دلوانے کا اعلان کیا ہے۔

رائس ایکسپورٹر ایسوسی ایشن کے چیئرمین محمود مولوی کے مطابق ایک ہزار مسلمان روہنگیا خاندانوں کی آبادکاری کے علاوہ ایسوسی ایشن کا ایک وفد فوری طورپر بنگلہ دیش جاناچاہتا ہے جہاں وہ متاثرہ خاندانوں کو راشن اور دیگر چیزیں فراہم کرے گا۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیاکہ وہ بنگلہ دیشن میں موجود اپنے سفیر کے ذریعے ایسوسی ایشن کے اراکین کو ان کے کیمپس تک پہنچانے اور ان کی امداد کیلیے سہولتیں فراہم کرے۔

محمود مولوی نے بتایا کہ ایک ہزار خاندانوںکی آباد کاری کیلیے ایسوسی ایشن نے وزارت داخلہ، وزارت خارجہ، برما کے سفیراور اقوام متحدہ کے پاکستان مشن کو خط ارسال کردیے ہیں۔

اس سلسلے میں رائس ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن آف پاکستان اور دیگر تجارتی ایسوسی ایشنز میانمار میں روہنگیا مسلمانوں کے خلاف مظالم کیلیے اظہار یکجہتی کے طور پر بدھ کو کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس کریں گی جس میں روہنگیا مسلمانوں کی امداد کے حوالے سے اہم اعلان کیا جائیگا۔