آئل ٹینکرزایسوسی ایشن کا تیل کی سپلائی بند کرنیکا اعلان

کراچی: آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین شمس شاہوانی نے بتایا کہ اوگرا کے قوانین پرعملدرآمد کرانے کی آڑمیں موٹروے اورٹریفک پولیس کی جانب سے ٹینکرزملکان کو تنگ کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ کئی دیہائوں سے انہی گاڑیوں سے تیل کی رسد جاری تھی لیکن کسی کو خیال نہ آیا، اب اگر اوگرا کے تحت سیفٹی کے اقدامات کئے جائیں تو فی گاڑی 10 لاکھ روپے خرچ آ رہا ہے۔ شمس شاہوانی کا کہنا تھا کہ ملک بھرمیں85 ہزار ٹینکرز کے ذریعے تیل سپلائی کیا جاتا ہے، حکومت کی پالیسیوں سے مجبور ہو کرٹرانسپورٹرز نے غیرمعینہ مدت کے لئے ہڑتال کا فیصلہ کیا ہے۔

گزشتہ ایک ماہ میں آئل ٹینکرز الٹنے کے 12 حادثات ہو چکے ہیں جبکہ 25 جون کو احمد پور شرقیہ میں آئل ٹینکر حادثے کے بعد لگنے والی آگ 200 سے زائد زندگیاں نگل گئی تھی جس کے بعد اوگرا اورموٹر وے پولیس نے احتیاطی تدابیر کے حوالے سے قوانین پر عملدرآمد کرانے کے لئے سخت اقدامات شروع کر دیئے ہیں۔