کیمیائی حملے کا دعویٰ 100 فیصد من گھڑت ہے، بشارالاسد

دمشق: شام کے صدر بشار الاسد کا کہنا ہے کہ کیمیائی حملہ کیے جانے کی اطلاعات من گھڑت اور 100 فیصد جھوٹ پر مبنی ہیں، جن کا مقصد ملک کی فورسز پر امریکی فضائی حملے کا جواز پیدا کرنا تھا۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی ’اے ایف پی‘ کو خصوصی انٹرویو کے دوران بشارالاسد نے کہا کہ شام کی حملے کی قوت امریکی حملے سے متاثر نہیں ہوگی، تاہم انہوں نے اعتراف کیا کہ امریکا کی جانب سے مزید حملے ہوسکتے ہیں۔

بشارالاسد نے زور دیتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت نے کئی سال قبل اپنے کیمیائی ہتھیاروں کے تمام ذخیرے بین الاقوامی انسپکٹروں کے حوالے کر دیئے تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ابھی یہ واضح نہیں کہ کیمیائی حملہ واقعی ہوا یا نہیں، کیونکہ ویڈیو کی تصدیق کیسے ہوسکتی ہے؟ اور اب کئی جعلی ویڈیوز موجود ہیں۔‘

واضح رہے کہ 4 اپریل کو شام کے صوبے ادلب کے علاقے خان شیخون میں مبینہ کیمیائی حملے کے نتیجے میں 31 بچوں سمیت 87 افراد ہلاک ہوئے تھے۔