ملک بھر میں بجلی نایاب، شارٹ فال 6 ہزار میگاواٹ تک جا پہنچا

لاہور: نیشنل پاور کنٹرول سینٹر کے ذرائع نے دنیا نیوز کو بتایا ہے کہ ملک بھر میں بجلی کی طلب 16500 میگا واٹ ہے، جبکہ مجموعی پیداوار 10 ہزار 500 میگا واٹ ہے۔ شارٹ فال میں اضافے سے شہروں میں 10 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ جاری ہے، جبکہ دیہی علاقوں میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 14 گھنٹے تک پہنچ گیا ہے۔ این پی سی سی کے اعدادوشمار کے مطابق سرکاری بجلی گھر صرف 2500 میگا واٹ بجلی پیدا کر رہے ہیں۔

دوسری جانب پانی سے بجلی کی پیداوار بھی انتہائی کم ترین سطح پر آ گئی ہے۔ اس وقت پن بجلی کی پیداوار 7 ہزار میگا واٹ سے کم ہو کر 1800 میگا واٹ پرآ گئی ہے۔ آئی پی پیز سے 6 ہزار جبکہ ونڈ اور سولر سے 200 میگا واٹ بجلی سسٹم میں شامل ہو رہی ہے۔ منگلا ڈیم کی کل پیداوار 1050 میگاواٹ سے کم ہو کر ساڑھے 400 میگا واٹ جبکہ تربیلا ڈیم سے بجلی کی پیداوار 3 ہزار 478 میگاواٹ سے کم ہو کر صرف 450 میگا واٹ رہ گئی ہے۔ غازی بروتھا پاور پراجیکٹ کی پیداوار 1100 سے کم ہو کر 400 جبکہ دیگر چھوٹے پن بجلی منصوبوں سے 500 میگا واٹ بجلی حاصل ہو رہی ہے۔