اشتعال انگیز تقاریر کیس؛ فاروق ستار کو ہر صورت گرفتار کرنے کا حکم

کراچی: انسداد دہشت گردی عدالت نے ایم کیوایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار کو اشتعال انگیز تقریر اور میڈیا ہاؤسز پر حملوں کے کیس میں 20 مارچ تک ہر صورت پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

انسداد دہشت گردی عدالت میں اشتعال انگیز تقاریراورمیڈیا ہاؤسز پرحملوں کے کیس کی سماعت ہوئی۔ کیس کے تفتیشی افسرحمید خان نے عدالت میں مؤقف پیش کیا کہ ایم کیوایم پاکستان کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار کی گرفتاری کے لئے چھاپے مارے جارہے ہیں فاروق ستار اور دیگر کی گرفتاری ضلعی سطح پرٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں جب کہ ملیرمیں درج مقدمات کی تفتیشی رپورٹ ایس ایس پی ملیرراؤانواردیں گے۔

عدالت نے فاروق ستار کی عدم گرفتاری اور پولیس رپورٹ پرعدم اطمینان اور برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پولیس عوام کو بے وقوف بنا رہی ہے حکومت اور پولیس کو مقدمات کی حساسیت کو سمجھنا ہوگا فاروق ستار کو ہرصورت گرفتارکیا جائے اورعدالت میں پیش کیا جائے۔ عدالت نے ایم کیو ایم پاکستان کے رہنماؤں عامرخان اور خالد مقبول صدیقی کو بھی پیرتک گرفتار کر کے پیش کرنے کا حکم جاری کرتے ہوئے سماعت 20 مارچ تک ملتوی کردی۔