حیدرآباد: ‘اربوں کی کرپشن’ کے الزام میں باپ بیٹا گرفتار

کراچی: قومی احتساب بیورو (نیب) کراچی کے حکام نے حیدرآباد کے علاقے لطیف آباد میں کارروائی کرکے کرپشن کے الزام میں برطرف ہونے والے پولیس اہلکار یوسف اور اس کے حاضر سروس پولیس کانسٹیبل بیٹے عارف کو گرفتار کرلیا۔

ڈان نیوز کی رپورٹ کے مطابق ملزمان کی نشاندہی پر ان کے گھر سے 38 لاکھ سے زائد پاکستانی روپے، 2 کروڑ ایرانی ریال، 745 سعودی ریال، 3405 اماراتی درہم نقد برآمد کرلیے گئے۔

اس کے علاوہ ملزمان کی نشاندہی پر گھر سے 12 لاکھ روپے سے زائد مالیت کے پرائزبانڈ اور 39 تولہ سونا بھی برآمد کیا گیا۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس آف پاکستان کے مطابق نیب کراچی کے ترجمان نے بتایا کہ نیب کراچی نے خفیہ معلومات پر 25 اور 26 فروری کو حیدرآباد کے علاقے لطیف آباد نمبر 9 میں چھاپہ مارا اور ملزمان محمد یوسف اور اس کے بیٹے عارف یوسف کو حراست میں لیا۔

ترجمان نے بتایا کہ ملزمان کے مختلف بینکوں میں 20 اکاؤنٹس موجود ہیں جن میں اربوں روپے کا لین دین ہوتاہے۔

ایک نجی بنک کے اکاؤنٹ میں 2 کروڑ سے لے کر 7 کروڑ روپے تک کی رقم جمع کرائی گئی۔

اس کے علاوہ ملزمان کے پاس شادی ہال ، لطیف آباد، بحریہ ٹاؤن اور سرجانی ٹاؤن کے 10 پلاٹوں کے کاغذات بھی برآمد ہوئے ہیں۔

ملزمان کے قبضے سے 10 گاڑیاں بھی برآمد کی گئیں ہیں جن کی مالیت تقریباً ایک کروڑ 43 لاکھ روپے بتائی گئی ہے۔