فیس بک کے استعمال سے وقت کی بربادی کا احساس کم ہورہا ہے

کینٹ، برطانیہ: آپ فیس بُک پر روزانہ اسٹیٹس اپ ڈیٹ کرنے، تصاویر لگانے اور پوسٹس پڑھنے میں جتنا وقت لگاتے ہیں دراصل اس کا احساس آپ کو کم کم ہوتا ہے۔ ماہرین کا خیال ہے کہ فیس بک اور سوشل میڈیا وقت گزرنے کے احساس کو بری طرح متاثر کررہے ہیں۔

برطانیہ میں یونیورسٹی آف کینٹ میں نیوروسائنس کے ماہرین ڈاکٹر لزارس گونیڈس اور ڈاکٹر ڈنکر شرما نے اپنی تحقیقات اپلائیڈ سائیکالوجی میں شائع کی ہیں۔ اس مطالعے میں انہوں نے انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا کا ایک منفی پہلو پیش کرتے ہوئے کہا کہ فیس بک کی لت ذہنی اور دماغی طور پر نقصان دہ ثابت ہوسکتی ہے۔

2016 میں پیو ریسرچ سینٹر کی جانب سے پیش کردہ ایک رپورٹ کے مطابق فیس بک کے 76 فیصد صارفین روزانہ فیس بک پر آتے ہیں اور ان میں سے 55 فیصد دن میں کئی مرتبہ فیس بک کا دورہ کرتے ہیں۔ جبکہ کینٹ یونیورسٹی کے ماہرین کی تحقیق بتاتی ہے کہ انٹرنیٹ اور فیس بک کا بار بار استعمال وقت کے زیاں کا احساس نہیں ہونے دیتا۔

اس کے لیے سائنسدانوں نے 44 بالغ افراد کو شریک کرکے انہیں مختلف تصاویر دکھائیں جن میں سے 5 فیس بک ، 5 انٹرنیٹ سے جبکہ بقیہ 10 تصاویر عام نوعیت کی تھیں۔

شرکا کو ہر تصویر ایک مخصوص وقت کے لیے دکھائی دی۔ ہر تصویر دیکھنے کے بعد شریک فرد سے پوچھا گیا کہ اس نے تصویر کو زیادہ دیر تک دیکھا یا کم مدت میں اس تصویر کا مطالعہ کیا۔

ماہرین نے نوٹ کیا کہ اکثر افراد نے فیس بک اور انٹرنیٹ کی تصاویر کو زیادہ دیر تک دیکھا اور انہیں وقت کا احساس نہیں رہا۔ اس مطالعے کے بعد ماہرین اس نتیجے پر پہنچے کہ فیس بک اورانٹرنیٹ کی تصاویر اور ان کی براؤزنگ میں ہم بہت وقت لگاتے ہیں لیکن ہمیں اس کا احساس ہی نہیں ہوتا۔