ریگولیٹریاداروں کومتعلقہ وزارتوں کےماتحت کرنےپراپوزیشن کی تنقید

اسلام آباد:قومی اسمبلی میں اپوزیشن نے ریگولیٹری اتھارٹیز اداروں کو متعلقہ وزارتوں کے ماتحت کرنے پر حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ نواز شریف نے صوبوں کو اعتماد میں نہ لے کر حکم جاری کرکے مغل بادشاہت کی یاد تازہ کردی ہے۔ حکومت ریگولیٹری اتھارٹیز پر کس بات کا غصہ نکال رہی ہے۔ حکومت غیر قانونی احکامات صادر کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔

پوائنٹ آف آرڈر پر پیپلزپارٹی کے پارلیمانی لیڈر نوید قمر نے کہاکہ حکومت نے ریگولیٹری اتھارٹیز کو وزارتوں کے ماتحت کرنے کا کیا مقصد ہے اور حکومت کے اس اقدامات سے آئین کی نفی کی گئی ہے یہ ادارے آزاد تھے جو خود مختارانہ فیصلے کرتے تھے ریگولیٹری اتھارٹیز کا مقصد مختلف سیکٹرز میں سرگرمیوں کو ریگولیٹ کرنا تھا لگتا ہے ملک کے اندر مغل بادشاہت چل رہی ہے۔ ریگولیٹری اتھارٹی کے قانون ایک دن میں نہیں بنے ہیں’ کس کی بات بادشاہت کو ناگوار گزری ہے جس کے نتیجہ میں آئین کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے ریگولیٹری اتھارٹیز کی خود مختارانہ صلاحیت ختم کردی گئی ہے۔ حکومت نے قانون کی دھجیاں بکھیر کر رکھی دی ہیں۔ نوید قمر نے کہا کہ حکومت ریگولیٹری اتھارٹیز کو وزارتوں کے ماتحت کرنے پر از سر نو غور کرے۔