پرویز خٹک کی سربراہی میں آنے والے پی ٹی آئی کے قافلے پرپولیس کی شیلنگ

اٹک: وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کی سربراہی میں دھرنے میں شرکت کے لیے آنے والے تحریک انصاف کے قافلے پر پولیس نے ہارون آباد موٹروے پر شیلنگ کردی جس کے نتیجے میں پولیس اور کارکنان میں جھڑپیں بھی ہوئیں جب کہ شیلنگ سے بعض کارکنان کی حالت غیر ہوگئی جنہیں اسپتال منتقل کردیا گیا۔

پاکستان تحریک انصاف کا قافلہ پشاور سے اسلام آباد پہنچنے کے لیے وزیراعلیٰ خیبرپخونخوا پرویز خٹک کی سربراہی میں کارکنان کی بڑی تعداد کے ساتھ اسلام آباد کی جانب رواں دواں ہے جس میں صوبائی وزیر بھی شامل ہیں، پرویز خٹک کی سربراہی میں آنے والا قافلہ جیسے ہی اٹک میں حضرو پہنچا تو وہاں انہیں پولیس کی جانب سے لگائی گئی رکاوٹوں کا سامنا کرنا پڑا۔

تحریک انصاف کے کارکنان نے جب رکاوٹیں ہٹانے کی کوشش کی تو وہاں موجود پولیس اور ایف سی اہلکاروں نے مظاہرین پر شیلنگ شروع کردی، پولیس کی شیلنگ کے بعد کارکنان بھی بپھر گئے اور اس دوران پولیس اور کارکنان میں جھڑپیں بھی ہوئیں، پولیس کی شیلنگ کے نتیجے میں کچھ شیل وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کی گاڑی کے قریب بھی گرے جس سے پرویز خٹک کو پیچھے ہٹنا پڑا جب کہ پولیس کی شیلنگ سے تحریک انصاف کے بعض کارکنان کی حالت غیر ہوگئی جس کےباعث انہیں فوری طور پر اسپتال منتقل کیا گیا۔

حضرو پر تحریک انصاف، پولیس اور ایف سی کے درمیان جھڑپیں ہوئی اور کارکنان نے پتھراؤ کردیا جس سے 14 ایف سی اہلکار بھی زخمی ہوگئے جب کہ اس دوران مشتعل مظاہرین نے ایک موٹرسائیکل کو آگ لگادی جس سے اس کی ٹنکی پھٹ گئی، موٹرسائیکل کی ٹنکی پھٹنے سے قریب کھڑی گاڑیوں کو آگ لگ گئی جس سے 10 گاڑیاں جل گئیں۔