تحریک انصاف کا کل پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کے بائیکاٹ کا اعلان

اسلام آباد:چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے بنی گالا میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا آج بہت اہم فیصلہ کیا ہے اور کل پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس ہے۔ بھارت کیخلاف ہم سب اکٹھے ہیں اور کشمیریوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی حمایت کرتے ہیں۔ تحفظات کے باوجود شاہ محمود قریشی کو اے پی سی میں بھیجا۔ شاہ محمود نے پارٹی کا موقف پیش کیا۔ انہوں نے کہا رائیونڈ تقریر میں نریندر مودی کو واضح پیغام دیا۔ سوال ہے کل ہم پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں کیا کریں گے؟۔ وزیراعظم وزارت عظمیٰ کا اخلاقی جواب کھو بیٹھے ہیں۔ مشترکہ اجلاس میں شرکت کا مطلب وزیراعظم کی توثیق ہوتا ہے۔ حکومت نے اپوزیشن کے ٹی او آرز نہیں مانے اور اسپیکر نے نواز شریف کا نہیں میرے خلاف ریفرنس بھیجا۔ نواز شریف پاناما معاملے سے بچنے کیلئے مسئلہ کشمیر کو استعمال کر رہے ہیں۔ کپتان نے کہا سی پیک پر چھوٹے صوبوں کو تحفظات ہیں۔ عمران خان نے مطالبہ کیا کہ وزیراعظم استعفٰی دیں اور اپنے آپ کو احتساب کیلئے پیش کریں۔ مسلم لیگ ن کا کوئی اور رہنما وزارت عظمٰی کا عہدہ سنبھالے۔ نواز شریف کرپشن بچانے کیلئے اداروں کو کمزور کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا اسلام آباد مارچ کے متعلق جمعرات تک آگاہ کریں گے۔