کراچی میں چربی کی خرید و فروخت کا کاروبارعروج پر

کراچی:کراچی میں چربی فروخت کرنے کے بھی بازار لگ گئے۔ تفصیلات کے مطابق قربانی کی آلائشوں کے ساتھ ضائع کی جانے والی چربی بے کار نہیں۔ یہ نہ صرف ہاتھوں ہاتھ خریدی جاتی ہے بلکہ عید پر تو اس کی ڈیمانڈ میں اور بھی اضافہ ہوجاتا ہے۔ عید پر جگہ جگہ چربی کے خریدار مصروف نظر آتے ہیں جو کہتے ہیں چربی بڑی کام کی چیز ہے۔ایسے شہری بھی ہیں جو پورا سال بڑی عید کا انتظار کرتے ہیں تاکہ چربی کے دام بڑھیں اور ان کی جیب گرم ہو۔ چربی کے خریداروں کا کہنا ہے کہ وہ یہ چربی فیکٹری والوں کو بیچ دیتے ہیں کیونکہ چربی سے صابن اور شیمپو بنایا جاتا ہے۔چربی کے خریدار لوگوں سے یہ چربی ساٹھ روپے فی کلو کے عوض خریدتے ہیں۔ یہ چربی ایک جانب تو کئی صنعتوں کیلئے خام مال ہے تو دوسری طرف کئی لوگوں کا روزگار اسی چربی سے وابستہ ہے۔