بھارت ،ہریانہ میں پولیس بریانی میں بیف چیک کرے گی

ہریانہ :بھارت کی مغربی ریاست ہریانہ کے حکام کے مطابق اب وہاں پولیس مٹن بریانی کی ڈشز کی چیکنگ کرے گی تاکہ یہ معلوم ہو سکے کہ اس میں گائے کا گوشت تو شامل نہیں کیا گیا۔ بی بی سی سے گفتگو میں گائے کی خدمت سے متعلق ’ہریانہ کاؤ سروس کمیشن کے چیئرمین بھانی رام منگلہ کا کہنا ہے کہ ضلع میوات میں تفتیشی ٹیم کے افسران کی مدد کے لیے جانوروں کے ماہرین بھی موجود ہوں گے۔ خیال رہے کہ انڈیا میں بسنے والے ہندوؤں کی اکثریت گائے کو ایک مقدس جانور تصور کرتی ہے تاہم بہت سے انڈین اس کا گوشت کھاتے ہیں۔ انڈیا کی ریاست ہریانہ میں گائے کے گوشت پر پابندی ہے۔ بھانی رام منگلہ نے بتایا کہ انھیں ایسی بہت سی شکایات موصول ہو رہی ہیں جس میں کہا جا رہا ہے کہ ضلع میوات میں بریانی میں مٹن اور بیف کو مکس کر کے بیچا جا رہا ہے۔ میں نے پولیس کو اسے چیک کرنے کا حکم دیا ہے، گوشت کے نمونے لیبارٹری میں بھجوائے جائیں گے۔ میوات دارالحکومت دہلی سے 100 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے اس علاقے میں پہلے بھی ہندوؤں اور مسلمانوں کے درمیان فسادات ہو چکے ہیں۔ہریانہ میں گائے کی سمگلنگ اور ذبح پر پابندی پر عملدرآمد کے لیے ایک خصوصی فورس تشکیل دی گئی ۔