افغان فورسزکی فائرنگ کے باعث پاک افغان طورخم بارڈرپرحالات کشیدہ

طورخم: طورخم بارڈرپرافغان فورسز کی جانب سے فائرنگ اورگولہ باری کے بعد پیدا ہونے والی کشیدگی کے باعث علاقے میں کرفیو نافذ کردیا گیا ہے۔

طورخم بارڈرپرافغان فورسزکی جانب سے فائرنگ اورگولہ باری کے نتیجے میں سیکیورٹی اہلکاروں سمیت کئی افراد کے زخمی اوراملاک کو نقصان پہنچنے کے بعد کشیدگی بڑھ گئی ہے، پاک فوج کی جانب سے افغان فورسزکی بلا اشتعال فائرنگ کا بھرپوراورمؤثرجواب دیا گیا دوسری جانب جھڑپوں کے بعد افغان حکومت نے اپنی فوج کی تازہ کمک بھی سرحد پر روانہ کردی ہے۔

سرحدی علاقے میں بڑھتی ہوئی کشیدگی کے پیش نظرمقامی انتطامیہ نے طورخم اور لنڈی کوتل میں کرفیو نافذ کرتے ہوئے لوگوں کو گھروں میں رہنے کی ہدایت کی ہے جب کہ قریبی اسپتالوں میں ایمرجنسی لگادی گئی ہے۔ اس کے علاوہ سرحد پار جانے والی مسافر اور مال بردار گاڑیوں کو روک کرواپس بھجوادیا گیا ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ’’آئی ایس پی آر‘‘ کے مطابق دہشت گردوں کی نقل و حرکت پرنظر رکھنے کےلیے پاکستان طورخم میں پاکستانی حدود میں گیٹ تعمیر کررہا ہے کیونکہ پاک افغان سرحد طورخم پر سب سے زیادہ نقل و حرکت ہوتی ہے اورحالیہ دنوں میں بیشتردہشت گرد اسی راستے کو استعمال کرتے پائے گئے ہیں۔ کشیدگی طورخم بارڈر پر پاکستان کی جانب سے اپنی حدود میں گیٹ نصب کرنے پرہوئی۔