پاکستان سے ایف سولہ طیاروں کا معاہدہ قابل عمل نہیں رہا، امریکا

واشنگٹن:امریکہ نے کہا ہے کہ پاکستان سے ایف سولہ طیاروں کا معاہدہ قابل عمل نہیں رہا ۔غیر ملکی میڈیاکے مطابق امریکی محکمہ خارجہ کے عہدیدار نے کیپیٹل ہل کے اجلاس کو بتایا ہے کہ پاکستان کے ساتھ ایف 16 طیاروں کا سودا اب قابل عمل نہیں رہا۔اجلاس کے دیگر شرکا نے امریکی حکومت پر زور دیا کہ وہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان تعلقات میں بہتری کے لیے تعاون کرے۔کیپیٹل ہل کا یہ اجلاس پاکستانی امریکی کانگریس کی جانب سے منعقد کیا گیا تھا، جو ہر سال امریکی قانون سازوں کے سامنے پاکستان کا موقف پیش کرنے کے لیے یہ اجلاس طلب کرتا ہے۔مڈل ایسٹ انسٹیٹیوٹ سے تعلق رکھنے والے امریکی اسکولر مارون وین بام نے اجلاس کے دوران خبردار کیا کہ ملا اختر منصور کے خلاف ڈرون حملہ صرف شروعات تھی، بلوچستان میں مزید ڈرون حملے ہوسکتے ہیں اور یہ پاکستان کے لیے انتہائی خطرناک صورتحال ہے۔تاہم پاکستانی سفارتخانے کے ترجمان عبد الرحمن نظامی نے چار ملکی رابطہ گروپ کے اراکین پر زور دیا تھا وہ 21 مئی کے ڈرون حملے کے نتائج پر غور کے لیے اجلاس طلب کریں۔پاکستان، افغانستان، امریکا اور چین کے نمائندوں پر مشتمل یہ گروپ گزشتہ سال افغان امن عمل کے حوالے سے تشکیل دیا گیا تھا۔